تقسیم برصغیر کے گرد گھومتی منفرد میگا سیریل گھگھی

تحریر: مزمل احمد فیروزی

        ٹیلی ویژن ڈراموں کے بارے میں کہا جاتاہےکہ اگر ایک اچھا لکھاری لکھے اور ایک اچھا ہدایت کار اس کو ڈرامے کی شکل میں پیش کرے تو یہ آرٹ کا حصہ بن جاتا ہے۔  بالکل اسی طرح ٹی وی ون کے دلچسپ ، سنسنی خیز اور تجسس سے بھرپور میگا سریل’ گھگھی‘ کی پہلی قسط دیکھ کر یہ اندازہ ہوا کہ وطن عزیز میں ڈرامہ نگاری ابھی زندہ ہے۔

        گزشتہ دنوں اس ڈرامے کی تعارفی تقریب منعقد ہوئی جس میں سوشل میڈیا کے بلاگرز کو مدعو کیا گیا تھا خاکسار کو اس ڈرامے کی ایک جھلک کی تقریب میں شریک ہونے کا موقع ملا ،جہاں ڈرامے کے ہدایت کار اقبال حسین نے بتایا کہ ڈرامے کی کہانی پاکستان کی آزادی یعنی1947ءکے پس منظر میں لکھی گئی ہے۔ کہانی ایک مسلمان اور ہندو کے درمیان پیار کے گرد گھومتی ہے جس میں دو خاندان ، ایک ہندو اور دوسرا مسلمان شیخ سالہا سال سے ایک گاوں میں آباد ہیں۔ معاشی ناہمواری کے باعث، شیخ، ہندوںکے مقروض تھے۔ ہندوکے لفنگے لونڈوں نے شیخوں کی غربت کا فائدہ اٹھایا اور اس کے ساتھ ہی پنچایت نے غلط فیصلہ سناکر ایک ایسی دشمنی کی بنیاد رکھ دی جواگلی نسل تک منتقل ہوگئی۔

        مضبوط اور اچھی کہانی کو اپنی کردار نگاری کے ذریعے پردہ اسکرین پر بہترین انداز میں پیش کرنا ہی کسی ڈرامے کی کامیابی کی بنیادی ضمانت ہوتی ہے اور ٹی وی کی خوش قسمتی یہ رہی ہے کہ اسے شروع سے ہی ایسے اداکاروں کی خدمات حاصل رہی ہیں۔ گھگھی کی کہانی پاکستان کی صف اول کی مصنفہ، ناول نگار اور افسانہ نویس آمنہ مفتی نے امریتاپریتم کے شہرہ آفاق ناو ل پنجرسے متاثر ہو کرلکھی ہے۔ ڈرامہ کی او ایس ٹی کی خالق ممتاز شاعرہ زہرہ نگاہ ہیں۔

        پاکستانی ڈراموں کا جادو ہمیشہ سے لوگوں پر چلتا رہا ہے اور جب بھی ڈراموں کی بات ہوتی ہے تو سب سے پہلے لوگوں کے ذہنوں میں کچھ چہرے ابھر کر سامنے آجاتے ہیں جن میں ایک نام عدنان صدیقی کا ہے،اس ڈرامے میں مرکزی کردارعدنان صدیقی خود نبھ ارہے ہیں اور ان کے ساتھ مرکزی کردار ادا کرنے والی اداکارہ امر خان کو پہلی بارڈرامہ انڈسٹری میں متعارف کرایا گیا ۔ دیگر کرداروں میں محسن گیلانی ، عاصمہ عباس ، خالد بٹ اور حمزہ فردوس شامل ہیں۔ گھگھی کی پہلی قسط ٹی وی ون پر 25جنوری کو نشر ہوئی جبکہ مزید قسطیں ہر جمعرات رات8بجے صرف ٹی وی ون پر نشر ہوں گی۔