غذائی اشیا جو بچوں کے لیے جان لیوا ثابت ہوسکتی ہیں

ایک سے تین سال کے بچوں کے لیے کچھ غذائیں جان لیوا بھی ثابت ہوسکتی ہیں۔امریکی ادارہ برائے معالجہ اطفال کے مطابق چونکہ اس عمر کا بچہ چبانا، نگلنا اور کھانا خود سیکھ رہا ہوتا ہے لہذا ایسی کئی غذائیں اس کے لیے خطرناک ثابت ہوسکتی ہیں جو حلق میں پھنس کر سانس روک دیں۔ مثلاً

گوشت کی بڑی بوٹیاں،اگر چھوٹے چوکور حصوں میں تقسیم کردی جائیں تو محفوظ ہیں۔

ثابت خشک میوے۔ بادام، کاجو، اخروٹ وغیرہ ۔

گٹھلی والے چھوٹے پھل۔ مثلاً جامن، فالسے، چیری وغیرہ۔

سخت ٹافیاں اور جیلی۔

چیونگم

انگور کے دانے

مارش میلو

کارن

کسی بھی غذا کے بڑے ٹکڑے مثلاً آلو، گاجر،سیب، خربوزہ اور دیگر پھل یا سبزی وغیرہ۔

بجہ جب خودمختار ہونے کی خاطر خود کھانے پینے کی کوشش کر رہا ہو تو یہ وقت نہایت احتیاط کا متقاضی ہے۔ وہ عجلت یا نا تجربہ کاری کے باعث بھی  کھانا سانس کی نالی میں پھنسا سکتا ہے۔ چناچہ کھانے کے وقت ماں کو ان کا نگران رہنا لازم ہے۔