ڈرامہ سیریل کسک رہے گی: کیا باپ اکیلا اولاد کی پرورش کر سکتا ہے؟

ڈرامہ سیریل کسک رہے گی: کیا باپ اکیلا اولاد کی پرورش کر سکتا ہے؟

February 9, 2019 | 677 Views

ٹی وی ون کے ڈرامہ سیریل کسک رہے گی کی نئی قسط میں ایک ایسا  موڑ دیکھنے میں آیا کہ جب دیکھنے والوں کی آنکھوں سے آنسو چھلک اٹھے۔  ڈرامہ کے آغاز میں  ایمان اور فصیح کے ہاں بیٹی کی پیدائش ہوتی ہے اور ان دونوں کے درمیان طے پائے معاہدے کے مطابق فصیح بچے کی پیدائش کے بعد  ایمان کو طلاق دینے کا پابند تھا ، فصیح نے ایمان کو طلاق دی اور اپنی بیٹی کو لیکر وہاں سے واپس آگیا

ایمان جو کہ فصیح کو جاتا دیکھ کر اندر ہی اندر شرمندہ اور نادم ہورہی ہوتی ہے بظاہر تو وہ فصیح سے چھٹکارہ حاصل کرکے خوش ہوتی ہے لیکن اندر سے وہ دکھی ہوتی ہے کہ اس کی اولاد اس سے دور جارہی ہے۔ دانیال ایمان کو جھنجھوڑتا ہے کہ یہ جو کچھ ہورہا ہے اس میں ہماری منشا شامل ہے۔  دانیال ایمان کو حوصلہ دینے کی کوشش کرتا ہے کہ  اب ہم اپنی نئی دنیا کا آغاز کریں گے اپنی مرضی کے مطابق۔

فصیح کے ہاں بیٹی کی پیدائش پر  ناصرہ بیگم پھولے نہیں سماتی ہیں ۔ ناصرہ بیگم  رابعہ اور صارم کے ہمراہ فصیح کے گھر جاتی ہیں اور فصیح کی بیٹی کو دیکھ کر خوشی سے نہال ہو جاتی ہیں۔ رابعہ فصیح کو یہ مشورہ دیتی ہے کہ اب اسے شادی کر کے اس بچی کو ماں کا پیار بھی دینا چاہیئے۔  لیکن فصیح ساف انکار کر دیتاہے۔  ناصرہ بیگم بچی کا نام لاریب رکھتی ہیں۔

 ایمان ہسپتال سے چھٹی کے بعد گھر جاتی ہے اور اس کے والد اسے دوٹوک کہہ دیتے ہیں کہ اب اس کی اس گھر میں مزید کوئی جگہ نہیں لہذا شام ڈھلنے پر  دانیال کو بلا کر خاموشی سے یہاں سے رخصت ہوجاؤ۔ دانیال شام میں تن تنہا  برات لیکر ایمان کے گھر جاتا ہے جہاں اس کا نکاح انتہائی سادگی کے ساتھ ایمان سے کروادیا جاتا ہے۔

Advertisement