ڈرامہ سیریل کسک رہے گی: دوسروں کی خوشیوں کو تباہ کرکے کبھی سکون نصیب نہیں ہوتا

ڈرامہ سیریل کسک رہے گی: دوسروں کی خوشیوں کو تباہ کرکے کبھی سکون نصیب نہیں ہوتا

March 2, 2019 | 761 Views

ایسی چاہ زمین  بوس ہو جاتی ہے جو دوسروں کے دلوں کو کچل کر کی جائے۔  یہ خوبصورت الفاظ  ٹی وی ون کے ڈرامہ سیریل کسک رہے گی کی نئی نشر ہونے والی قسط میں دانیال کی ماں  ناصرہ بیگم نے ادا کئے۔  ڈرامہ کے آغاز میں  ایمان دانیال پر رعب ڈالتی ہے کہ وہ کسی طرح  رابعہ کو طلاق دیکر  اسے چلتا کرے۔ اسی بات کو لیکر  دونوں میں بحث چھڑ جاتی ہےاور یہ بحث دانیال کی نارضگی پر اختتام پذیر ہوتی ہے۔

دانیال ایمان سے ناراض ہو کر گھر سے باہر چلاجاتا ہے، رابعہ دانیال کے رات گئے باہر جانے سے شدید پریشانی میں مبتلا اور رو رو کر ہلکان ہو جاتی ہے۔ دانیال واپس آتا ہے تو رابعہ کو اپنا منتظر پا کر  شرمندہ تو ہوتا ہے مگر وہ اس بات کو ظاہر نہیں ہونے دیتا، دانیال جب اپنے کمرے میں پہنچتا ہے تو ایمان خواب خرگوش کے مزے لوٹنے میں مصروف ہوتی ہے۔ دانیال خود سے سوال کرتا ہے کہ ایک یہ جسے میری کوئی پرواہ نہیں ہے اور ایک رابعہ ہے جس  کو  ٹھوکر مارنے کے باوجود بھی وہ اس کی منتظر بیٹھی تھی۔

اگلی صبح دانیال خاموشی سے آفس جانے کے لیے نکلتا ہے تو ایمان کو یاد آتا ہے اس نے رات میں دانیال کو خفا کر دیا تھا ، ایمان دانیال کو مناتی ہے دانیال اسے یہ باور کرواتا ہے کہ امی اور رابعہ کو معلوم ہوگیا ہے کہ میں تم سے ناراض ہوں ، وہ اس بات کو لیکر بہت خوش ہوں گے۔ دانیال ایمان کو لیکر باہر جاتا ہے اور وہاں ایمان سے سخت لہجے میں بات کرتا ہے ، ایمان فوراً داسے ٹوک دیتی ہے کہ مجھ سے اس لہجے میں بات مت کریں۔

دانیال کو غصہ آجاتا ہے۔ ایمان دانیال کو کہتی ہے کہ میں آپ سے شادی کر کے ہی پچھتا رہی ہوں۔ اس سے زیادہ خیال تو فصیح رکھ لیتا تھا میرا۔ جس پر دانیال ایک مرتبہ پھر ایمان سے خفا ہو جاتاہے۔  دوسری جانب ناصرہ بیگم فصیح کے گھر جاتی ہیں اور اسے سمجھاتی ہیں وہ اکیلا لاریب ی پرورش نہیں کرسکتا لہٰذا اسے دوسری شادی کر لینی چاہیے۔

Advertisement