ڈرامہ سیریل جدا نہ ہونا کی پہلی قسط نشر، عوام کی جانب سے بھرپور پذیرائی

ٹی وی ون  کا ہمیشہ سے خاصہ رہا ہے کہ وہ اپنےکروڑوں ناظرین کو بہترین انٹرٹینمنٹ مہیاکرتا ہے۔ ڈرامہ سیریل نولکھا اور رورہاہے دل کے شاندار اختتام کے  بعد ٹی وی ون نے ایک نیا سیریل  جدا نہ ہونا  پیش کیا۔ ڈرامہ سیریل جدا نہ ہونا ڈرامہ سیریل جدا نہ ہوناکی پہلی قسط نے نشر ہوتے ہی  ناظرین کو اپنے سحر میں جکڑ لیا۔

ڈرامہ کے آغاز میں  عبد المنان کی صاحبزادی  سماہا  اپنے والد سے ایسی دیدہ دلیری سے بات کرتی ہے کہ اس کے والد اس کے اس رویے سے  سخت نالاں نظر آتے ہیں۔ سماہا کی بہن  سجل اسے سمجھاتی ہے کہ تم ایسا رویہ مت رکھا کرو ابوکے ساتھ مگر سماہا کو ایسے لگتا ہے کہ جیسے اس کے والد نے اسے قید میں رکھا ہوا ، جو زمانے سے چھپا کر اپنی بیٹیوں کو  کسی بھی غلط سمت جانے سے روکتے ہیں۔

اگلے روز سماہا اور اس کی بہن سجل کو یونیورسٹی سے لوٹنے میں کچھ تاخیر کا سامنا کرنا پڑتاہے، اور اس کی وجہ بنتی بس کا نہ ملنا ہوتاہے۔ عبدالمنان صاحب اسی لمحے گھر میں پہنچ جاتے ہیں اور بچیوں کا نا پاکر اپنی روزجہ سے وجہ پوچھتے ہیں تو وہ یہ بہانہ کر دیتی ہیں کہ بچیاں سو رہی ہیں۔ سماہا کی ماں ان کے باپ سے چھپ کر انہیں فون کرتی ہے اور پچھلے دروازے سے گھر میں داخل ہونے کا کہتی ہے اور یہ بات عبدالمنان سن لیتے ہیں۔ جس کے بعد گھر میں طوفان برپا ہوجاتا ہے۔

عبدالمنان کا ایک قریبی ساتھی اس کو ایک رشتے کے بارے میں بتاتا ہے جسے وہ سنتے ہی قبول کر لیتا ہے ، اور ساتھ ہی اپنے گھر آنے کی دعوت بھی دے ڈالتاہے۔ سماہا کی ماں اسے بتاتی ہے کہ اس کو دیکھنے والے آرہے ہیں ، یہ سنتے ہی سماہا میں جیسے بجلی دوڑ جاتی ہے اور وہ اپنی ماں پر چڑھ دوڑتی ہے کہ میں ایسے ہی کسی کے ساتھ شادی نہیں کروں گی۔ اگلے روز سماہا کی نظر سدیس پر پڑتی ہے اور وہ اسے دیکھتے ہی پسند کر بیٹھتی ہے۔

کیا سماہا کی آنکھوں کے خواب پورے ہو پائیں گے؟ سماہا اپنے والد کی سختی سے تنگ آکر کوئی قدم اٹھائے گی؟ جاننے کے لیے دیکھیں ڈرامہ سیریل جدا نہ ہونا ، ہر پیر کی رات 8:00 بجے صرف ٹی وی ون پر۔